حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے باز رہے،حافظ نعیم الرحمن

کراچی (ہم صفیر نیوز)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے اقتصادی رابطہ کمیٹی(ECC) کی جانب سے پیٹرول 9روپے اور ڈیزل 5روپے مزید مہنگا کر نے کی منظوری دینے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے باز رہے۔ وزیر اعظم عمران خان اور وفاقی کابینہ رمضان المبارک کی آمد پر عوام کے لیے ریلیف کو یقینی بنائیں اور ECC کے اس فیصلے پر عمل در آمد روک دیں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ حکومت کی نا اہلی اور ناکام اقتصادی پالیسیوں کے باعث ملک میں مہنگائی کا طوفان پہلے ہی آیا ہوا ہے اور ہوش ربا مہنگائی نے عوام کے ہوش اُڑادیئے ہیں مگر معلوم ہوتا ہے کہ حکومت اور وزراء کو عوامی مشکلات و پریشانیوں سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ حکومت عوام کو ریلیف فراہم کر نے میں ناکام ثابت ہو ئی ہے اور مسلسل عوام کو نوید سنائے جارہی ہے کہ حالات جلد بہتر ہوں گے۔حکومت میں آنے سے قبل ان کی جانب سے مسلسل تنقید کی جاتی تھی کہ پیٹرولیم مصنوعات پر بلا وجہ ٹیکس عائد ہیں اور یہ ٹیکس ختم کردیئے جائیں تو پیٹرول کی قیمت بہت کم ہو جائے گی اور 50روپے فی لیٹر پیٹرول فروخت کیا جاسکتا ہے مگر آج ان کی حکومت آنے کے بعد بھی پیٹرولیم مصنوعات پر ٹیکس وصول کیے جارہے ہیں اور سینیٹ کے اجلاس میں حکومت نے تسلیم کیا ہے کہ پیٹرول پر تقریباً 37روپے، ڈیزل پر تقریباً 48روپے، مٹی کے تیل پر تقریباً 20روپے اور لائٹ ڈیزل پر تقریباً 15روپے فی لیٹر ٹیکس اور ڈسٹری بیوشن چارجز بھی وصول کیے جا رہے ہیں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ ایسا محسوس ہو تا ہے کہ حکومت نے مہنگائی کے سامنے پسپائی اختیار کر لی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں گزشتہ کئی ماہ سے بار بار اضافہ کیا جا رہا ہے جس کے باعث کھانے پینے کی اشیاء اور دیگر ضروریات ِ زندگی کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافہ عوام کی قوت برداشت سے باہر ہوتاجا رہا ہے جسے اب کسی طرح قبول نہیں کیا جا سکتا۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام دوست حکومت کا ثبوت دے ایسے اقدامات کرے کہ عوام پر سے مہنگائی کا بوجھ کم ہو سکے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.