مسائل کے نجات اور عدل و انصاف اسلامی نظام کے بغیر ممکن نہیں، حافظ نعیم الرحمن

کراچی (ہم صفیر نیوز) امیر جماعت اسلامی کراچی حا فظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ عوام کو مسائل سے نجات اور عدل و انصاف اس وقت تک فراہم نہیں ہوسکتا جب تک کہ اسلامی نظام حکومت قائم نہ ہوجائے، اسلام کا عادلانہ نظام ہی سب کو انصاف فراہم کرسکتا ہے، اس نظام میں امیرو غریب اور حاکم و عوام سب کے ساتھ یکسا ں سلوک ہوگا،ہماری ذمہ داری ہے کہ ہم ملک میں اسلام کا عادلانہ اور منصفانہ نظام قائم کر نے کی جدو جہد کریں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے جماعت اسلامی علاقہ شاہ لطیف کے تحت ملیر میں دعوت افطار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر امیر ضلع ملیر محمد اسلام، سیکریٹری ضلع سید مفخر، ناظمہ علاقہ قدر گل، نائب ناظم علاقہ خواجہ محمد تنولی اور دیگر بھی موجود تھے۔حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کرتے ہوئے مزید کہا کہ رمضان المبارک صبرو استقامت اور ایثار و قربانی کا مہینہ ہے جو برائیوں سے بچاتا ہے نیکی اور خیر کے کام کرنے کا جذبہ پیدا کرتا ہے، ہمیں بڑھ چڑھ کرنیکی کے کاموں میں حصہ لینا چاہیئے اور زیادہ سے زیادہ رحمتوں اور برکتوں کو سمیٹنا چاہیئے،انہوں نے کہا کہ مملکت ِ خدادداد پاکستان رمضان المبارک کے بابرکت مہینے میں ہی معرض وجود میں آیا یہ ملک اسلامی نظام قائم کرنے کے لیے حاصل کیا گیا تھا لیکن افسوس کہ 70سال گزرنے کے باوجود پاکستان کو اس کی اصل روح کے مطابق قائم نہیں کیا جاسکا،اسلام ہی ملک پاکستان کی بقاء ہے ہم سب کو مل کر اسلامی اور خوشحال پاکستان کے لیے جدوجہد کرنی ہوگی اور ملک کو اس کے اصل مقصد اورروح کے مطابق بنانا ہوگا۔اس ملک میں اس وقت تک بہتری نہیں آئے گی جب تک ملک میں احتساب کا نظام سب کے لیے یکساں نہ ہوجائے۔ انہوں نے کہاکہ جب خلیفہ وقت حضرت عمرؓسے ایک جوڑے کپڑے پر حساب ہوسکتا ہے تو پھر آ ج کے حکمرانوں اور حکمران ٹولے کا احتساب کیوں نہیں ہوسکتا۔ ضروری ہے کہ سب کا بلا امتیاز اور بے لاگ احتساب کیا جائے اور لوٹی ہوئی قومی دولت واپس لی جائے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.