این اے 205 گھوٹکی، خانگڑھ ضمنی الیکشن پر بڑے پیمانے پر سر گرمیاں شروع

گھوٹکی (ہم صفیر نیوز) پاکستان تحریک انصاف کے رہنما وفاقی وزیر انسداد منشیات علی محمد خان مہر کی وفات کے بعد خالی ہونے والی نشست این اے 205 گھوٹکی، خانگڑھ ضمنی الیکشن پر بڑے پیمانے پر سر گرمیاں شروع ہو گئی ہیں ، آزاد امیدوار احمد علی خان مہر کو کامیاب کرانے کےلئے چچا جی ڈی اے کے رکن سندھ اسمبلی علی گوہر خان مہر اور اس کے اتحادیوں سمیت پیپلزپارٹی سے وابسطہ بلدیات کے چیئرمینوں اور کونسلروں نے حلقہ میں ورک شروع کر کے لوگوں سے میل جول شروع کر دی ۔ جبکہ پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کے رکن سندھ اسمبلی جام اکرام اللہ دھاریجو، احسان خان سندرانی و دیگر کی جانب سے پی پی امیدوار محمد بخش خان مہر کی کامیابی کےلئے کوششیں کی جا رہی ہیں ۔ جبکہ ضمنی الیکشن کے موقع پر آزاد امیدوار سمیت پی پی امیدوار کی کامیابی کےلئے مقامی سیاستدانوں کو تعزیتیں بھی یاد آ گئی ہیں ۔ گزشتہ روز امیدواروں نے مختلف جگہوں پر پہنچ کر حلقہ این اے 205 کے لوگوں سے فوت ہو جانے والوں کے ورثاء سے تعزیتیں کیں ۔دوسری جانب نامزدگی فارم رد ہونے کے خلاف داخل کی گئی اپیلوں پر الیکشن ٹریبونل سکھر میں سماعت ھوئی اس موقع پر الیکشن ٹریبونل کے جج جسٹس محمد جنید غفار نے آزاد امیدوار احمد علی خان مہر کا فارم بحال ہونے کے خلاف داخل کی گئی اپیل پر شنوائی کے دوران احمد علی مہر کے وکیل نے پیش ہو کر اپنا جواب داخل کروایا، جبکہ اعتراض داخل کروانے والے ووٹر کے وکیل نے ٹربیونل میں جواب داخل کرانے کےلئے مہلت طلب کی جس پر الیکشن ٹریبونل نے شنوائی آج تک ملتوی کر دی اس طرح جی ڈی اے کے رکن سندھ اسمبلی علی گوہر خان مہر کے بیٹے حاجی خان مہر کی طرف سے رٹرننگ آفیسر کے فیصلے کے خلاف فارم کی بحالی کےلئے داخل کی گئی درخواست پر شنوائی ہوئی اس موقع پر درخواست گزار اپنے وکیل سمیت پیش ہوئے ۔ اور وکیل نے اپنے دلائل دیئے ۔ جس کے بعد فریقین کو نوٹس جاری کرتے ہوئے شنوائی آج تک ملتوی کر دی گئی ۔ دوسری جانب الیکشن کمیشن کی طرف سے جاری کی گئی انتخابی شیڈول کے مطابق داخل کی گئی تمام اپیلوں پر الیکشن ٹریبونل 25 جون تک اپنا فیصلہ سنائے گا ۔ جس کے بعد 26 جون کو امیدواروں کے ناموں کی حتمی لسٹ لگائی جائے گی اور 27 جون کو امیدوار اپنے کاغذات واپس لے سکیں گے ۔ اس طرح 28 جون کو امیدواروں کو انتخابی نشان الاٹ کئے جائیں گے ۔ دوسری جانب ضمنی الیکشن کےلئے پولنگ اسٹیشن عملہ کو تربیت دے کر حلقہ کے ووٹروں کو پولنگ اسٹیشنز پر ووٹ کاسٹ کرنے کےلئے ترتیب دیئے گئے پولنگوں پر ایک ہفتے کے اندر اعتراض داخل کرنے کےلئے درخواستیں جمع کرانے کی ہدایت کی گئی ہیں ۔ اس سلسلے میں ڈی آراو رانا عبدالغفار نے لیٹر جاری کرتے ہوئے ووٹرز کو ہدایت کی ہے کہ وہ ان کے دفتر میں اعتراض اور سجیشن جمع کروائیں ۔ دوسری جانب ڈپٹی کمشنر گھوٹکی خالد سلیم نے ضلع گھوٹکی کے تمام اسسٹنٹ کمشنروں سمیت صوبائی اور وفاقی محکموں کو ایک لیٹر لکھ کر ہدایت کی ہے کہ وہ ضمنی الیکشن کے دوران سرکاری عمارتوں سمیت دیگر جگہوں پر پینا فلیکس پمفلیٹ اور پوسٹر وغیرہ فوری طور پر اتار لیں لیٹر میں مزید کہا گیا ہے کہ انتخابی مہم کے دوران سرکاری ملکیت پر اشتہار لگانا الیکشن کمیشن آف پاکستان کی جانب سے جاری کردہ ضابطہ اخلاق کی خلاف ورزی ہے اس لئے متعلقہ آفسران انتخابی مہم کے اشتہار ہٹانے کےلئے کاروائی کر کے رپورٹ فراہم کریں ۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.