سکھر اسمال ٹریڈرز نے بھی 13 جولائی کو شٹر ڈاؤن ہڑتال کا اعلان کردیا

سکھر(ہم صفیر نیوز) آل پاکستان انجمن تاجران کے نائب صدر و سکھر اسمال ٹریڈرز کے صدر حاجی محمد جاوید میمن نے ظالمانہ ٹیکس کے خلاف 13 جولائی بروز ہفتہ کو ملک گیر سطح پر شٹر ڈاؤن ہڑتال کا اعلان کردیا،ملک کے دیگر حصوں کی طرح سکھر میں بھی 13جولائی بروز ہفتہ کو مکمل شٹر ڈاؤن ہڑتال کی جائے گی۔ اس سلسلے میں تاجر سیکریٹریٹ گولڈ سینٹر صرافہ بازار میں پرہجوم ہنگامی پریس کرتے ہوئے حاجی محمد جاوید میمن کاکہنا تھا کہ وفاقی حکومت کی جانب سے حالیہ بجٹ کے دوران تاجر برادری پر جبری طور پر ظالمانہ ٹیکسز کی بھر مار کی گئی ہے، تاجر برادری ملکی معیشت کی ترقی اور خوشحالی کیلئے باقاعدگی سے ٹیکس بھی ادا کرتی ہے اس کے باوجود محکمہ ایف بی آر کی جانب سے ٹیکس کا دائرہ کار بڑھانے کے بجائے ٹیکس ادا کرنیوالے تاجروں پر ہی جبری طور پر نت نئے انداز سے مزید ٹیکسز کا بوجھ ڈال رہے ہیں اور تجارتی مراکز میں گھس کر تاجروں کو حراساں کر نے کا سلسلہ شروع کیا گیا ہے جس کے ملکی معیشت پر انتہائی بھیانک اثرات مرتب ہو رہے ہیں،اس موقع پر حاجی غلام شبیر بھٹو، عبدالستار راجپوت، شکیل قریشی، عبدالقادر شیوانی، محمد زبیر قریشی، رئیس قریشی، ظہیر حسین بھٹی، بابو فاروقی، سیدمحمد شاہ، محمد شبیر میمن،عبدالباری انصاری، اعظم خان، محبوب صدیقی، شریف ڈاڈا، محمد منیر میمن، عارف بھٹی، رضوان قادری، احسان بندھانی، شفیق الرحمن،ذاکر خان، عارف شیخ، صداقت خان، ہشمت اللہ، ڈاکٹر سعید اعوان، طارق میرانی،محمد رفیق، ہاسو مل،ذاکر بندھانی، چندر لعل، محمد اقبال میمن، ایاز ابڑو، حاجی خدا بخش بھٹی، قمر الدین، فخر الدین عباسی، محمد ابراہیم، مراد علی، اویس سیٹھی، استاد مقیم مہر، استاد محمد سلیم، و دیگر بھی موجود تھے۔ حاجی محمد جاوید میمن کا مزید کہنا تھا کہ حالیہ وفاقی بجٹ کے دوران حکومت کی جانب سے تاجر برادری پر ٹیکسز کی بھرمار کی گئی ہے، جس میں سیل اینڈ پرچیز پر شناختی کارڈ کی کاپی اور انوائیز کے بغیر مال فروخت کرنے کی شرط عائد کی گئی ہے، جبکہ جیولرز پر بھی 17.5 فیصد سیلز ٹیکس عائد کیا گیا ہے، اسی طرح جیولرز کے کاریگر جو مال بنائیں گے اس پر سروس چارچز عائد کی گئی ہے، جبکہ تھوک و پرچون ڈسٹری بیوٹرز، ہول سیلرز، ریٹیلرز پر 1.5 فیصد ٹرن اور ٹیکس عائد کیا گیا ہے اور5 فیصد ودھولڈنگ ٹیکس عائد کیا گیا ہے جس سے کاروبار کرنا مشکل سے مشکل تر ہوتاجا رہا ہے۔ ہم نے آل پاکستان انجمن تاجران کے پلیٹ فارم سے حکومتی اراکین اور محکمہ ایف بی آر کے اعلیٰ حکام سے ملاقاتیں کر کے اپنے تحفظات سے آگاہ کیا اور ظالمانہ ٹیکسز کے خاتمے کیلئے مطالبات کیے لیکن حکومت کی جانب سے تاجر برادری کے مسائل کے حل کیلئے کسی بھی قسم کے اقدامات نظر نہیں آرہے، جس کے باعث بحالت مجبوری آل پاکستان انجمن تاجران کی جانب سے مورخہ 13 جولائی بروز ہفتہ کو ملک گیر شٹر ڈاؤن ہڑتال کی کال دی گئی ہے۔اس سلسلے میں سکھر اسمال ٹریڈرز کا ہنگامی اجلاس منعقد ہوا جس میں شہر کی 35 سے زائد تجارتی تنظیموں کے صدور و جنرل سیکریٹرز نے شرکت کی۔ جس میں تمام مارکیٹوں کے صدور و جنرل سیکریٹریز نے متفقہ طور پر فیصلہ کیا ہے کہ ملک کے دیگر شہروں کی طرح سکھر میں بھی مورخہ 13 جولائی بروز ہفتہ کو مکمل طور پر شٹر ڈاؤن ہڑتال کی جائے گی اور سکھر اسمال ٹریڈرز کے زیر اہتمام دوپہر 12 بجے غوثیہ مسجد کپڑا مارکیٹ سے گھنٹہ گھر چوک تک احتجاجی ریلی نیکالی جائے گی۔ اور اگر اس کے بعد بھی حکومت اور محکمہ ایف بی آر نے تاجروں پر عائد ٹیکسز کا خاتمہ نہیں کیا تو ہم اپنے احتجاج کا دائرہ کار وسیع کرتے ہوئے غیر معینہ مدت کیلئے شٹر ڈاؤن ہڑٹال کی کال بھی دے سکتے ہیں جس کی تمام تر ذمہ داری حکومت اور محکمہ ایف بی آر پر عائد ہوگی۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.