ایل پی جی کا کاروبار کراچی میں مسلسل تیسرے روزبھی بند رہا

کراچی(ہم صفیر نیوز)ایل پی جی کا کاروبار کراچی میں مسلسل تیسرے روز اتوار کوبھی بند رہا اور شہر بھر میں 99فیصد ایل پی جی آٓؤٹ لیٹس اور ایل پی جی فراہم کرنے والے 14پلانٹ مکمل بند رہے۔ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز نے مسائل حل نہ ہونے تک مسلسل ہڑتال جاری رکھنے کی دھمکی کے پیش نظرمسئلے کے حل کیلئے کمشنر کراچی کی جانب سے مقرر کردہ فوکل پرسن ڈپٹی کمشنر ساؤتھ نے ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز کے مسائل کے حل کیلئے آج(پیر)تمام اسٹیک ہولڈرز کا اجلاس طلب کرلیا ہے،اس اجلاس میں ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایسوسی ایشن کے نمائندے،سول ڈیفنس،ضلعی انتظامیہ، پولیس اور دیگر کی نمائندگی ہوگی۔ایل پی جی کی بندش سے شہربھر ریسٹورنٹس،سڑکوں پر چپس،بندکباب اور دیگر اشیافروخت کرنے والے بھی بے روزگار ہوگئے جبکہ شہر بھر میں ہزاروں گھروں میں بھی ایل پی جی نہ ملنے سے چولہے ٹھنڈے پر گئے ہیں،ایل پی جی کی بندش کی آڑ میں پولیس کے دھندے شروع ہوگئے ہیں،ایل پی جی فروخت کرنے والے دکاندار اپنی دکانوں کے شٹربند کرکے بے روزگاری کے سبب سر پکڑ کر بیٹھے ہیں مگرشہری اور صوبائی انتظامیہ کے کانوں پر جوں تک نہیں رینگی ہے۔ ایل پی جی ڈسٹری بیوٹرز ایکشن کمیٹی کے نائب صدر،آل پاکستان ایل پی جی ڈیسٹری بیوٹر ایسوسی ایشن کے سینئروائس چیئرمین اور ایف پی سی سی آئی میں ایل پی جی اسٹینڈنگ کمیٹی کے چیئرمین محمد علی حیدر نے بتایا کہ کراچی میں 350ڈسٹری بیوٹرز اور700سے زائد ایل پی جی سیلز پوائنٹس عوام کوسستامتبادل ایندھن فراہم کرتے ہیں لیکنپولیس نے شہر میں ایل پی جی کی ترسیل بند کرکے ایل پی جی ریٹیلرز کو بے روزگار کردیا ہے، ڈسٹری بیوٹرز سیفٹی قوانین پرعمل درآمد میں تعاون کے لیے تیار ہیں لیکن حکومت سول ڈیفنس کو فعال بنا کر ایل پی جی ایسوسی ایشن کے ساتھ ایک جوائنٹ انسپکشن ٹیم تشکیل دی جائے جو دکانوں کا معائنہ کرکے سیفٹی کو یقینی بنا سکے۔علی حیدر نے بتایا کہ ایل پی جی فروخت کرنے والے دکانندار اور خریدار یکساں پریشان ہیں،لوگوں کے گھروں میں بچوں کا دودھ تک گھرم نہیں ہورہا ہے اور نہ ہی خواتین کھانا پکاسکی ہیں کیونکہ ایل پی جی کی فروخت بند کردی گئی ہے،ایل پی جی کے بڑے خریدار سپرہائی وے،دودریا اور شہر کے زیادہ علاقوں میں قائم ریسٹورنٹس،تندور،کنفکشنری کی دکانیں،روزمرہ روزی کمانے والے چھوٹے دکاندار شامل ہیں لیکن ایل پی جی کی ترسیل بند ہونے سے سب کا کاروبار متاثر ہے اور اب تک اسٹیک ہولڈرز 6سے7کروڑ روپے کا نقصان اٹھا چکے ہیں جبکہ ایل پی جی کے تمام پلانٹس بھی بند ہیں۔انہوں نے توقع کا اظہار کیا کہ آج پیر کو یقینی طور پر اس مسئلے کا حل نکال لیا جائے گا۔ دریں اثنا چیرمین ایل پی جی ڈیسٹری بیوٹر ایسوسی ایشن پاکستان عرفان کھو کھر کے مطابق کراچی کے ڈسٹری بیو ٹر اور دوکانداروں سے یکجہتی کیلے ملک بھر میں اتوار 21 جولائی کو صبح 11بجے دن تمام ڈسٹری بیوٹر دوکاندار اپنے اپنے شہروں، علاقے اور قصبہ میں پریس کلب کے سامنے پولیس کی بھتہ گیری کے خلاف مظاہرہ کریں گے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.