صنعتوں کا فروغ ملک کے معاشی بحران کا واحد حل ہے،دانش خان

کراچی(ہم صفیر نیوز) کورنگی ایسوسی ایشن آف ٹریڈ اینڈ انڈسٹری(کاٹی) کے صدر دانش خان نے کہا ہے کہ صنعتوں کا فروغ ملک کے معاشی بحران کا واحد حل ہے، اس کے ایس ایم ای سیکٹرکو توانائی اور کاروباری قرضوں تک با سہولت رسائی فراہم کرنا ہوگی، بصورت دیگر ملک میں مہنگائی اور بیروزگاری میں خطرناک حد تک اضافہ ہونے کے امکانات کے ساتھ نئی صنعتوں کا قیام ناممکن ہوجائے گا، صنعتی پیداوار کا شعبہ تقریبا 12فیصد تک سکڑ گیا ہے اور مجموعی پیدوار میں تقریباً ساڑھے تین فیصد تک کمی واقع ہوئی ہے،روپے کی گرتی ہوئی قدر اور اسٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سود میں اضافہ صنعتوں کی پیداواری لاگت اور سرمایہ کاری پر منفی اثر ڈال سکتا ہے، اگر حالات پر قابو نہیں پایا گیا تو ایس ایم ای اور صنعتی شعبے تباہ ہوجائیں گے۔دانش خان نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ حکومت نے برآمدات میں اضافے کے لیے مثبت اقدامات کیے ہیں تاہم پالیسی سازی کی سطح پر پیداواری لاگت میں کمی اور ملکی صنعت کو عالمی مارکیٹ میں مسابقت کے قابل بنانے کے لیے مزید اقدامات کی ضرورت ہے، صنعتی شعبے میں سرمایہ کاری اور کاروباری قرضوں کے لیے خصوصی اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ دانش خان کا کہنا تھا کہ درمیانے اور چھوٹے درجے کے کاروبار کو توانائی اور کاروباری قرضوں تک کی با سہولت رسائی فراہم کرنے سے برآمدات میں اضافے اور روزگار کی فراہمی کے اہداف حاصل ہوسکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ آئندہ مالی سال کے بجٹ میں برآمد کنندگان کو دی گئی مراعات کو ان تک براہ راست اور بروقت فراہمی کے لیے اقدامات ہونے چاہییں۔ کاٹی کے صدر نے مزید کہا کہ صنعتی شعبے کے فروغ ہی سے ملکی معیشت استحکام کی راہ پر گامزن ہوسکتی ہے۔ کاٹی کے صدر نے کہا کہ کورنگی صنعتی علاقے میں تعمیر ہونے والے ٹریٹمنٹ پلانٹ منصوبے سے متعلق تمام مراحل میں کاٹی کی نمائندگی کو یقینی بنایا جائے،ہمارے لیڈر ایس ایم منیر بھائی جان نے ہمیں مشکلات سے لڑنے کا جذبہ دیا ہے اور ہم حکومت کے ساتھ قدم ملا کر مسائل کو دور کرنا چاہتے ہیں لیکن حکومت بھی ہمیں تمام معاملات میں شامل کرے اور مشاورت کرے۔انکا کہنا تھا کہ توانائی کی بچت قومی فریضہ ہے، اس کے لیے ہم سب کو مل کر اپنا کردار ادا کرنا چاہیے، بجلی کی پیدواری لاگت اور طلب و رسد کے فرق کو پیش نظر رکھتے ہوئے قومی سطح پر بجلی کی بچت کے لیے اقدامات کرنے کی ضرورت ہے۔ دانش خان نے مزید کہا کہ حکومت کی جانب سے صنعتوں کیلئے پیکج کی ضرورت ہے کیونکہ صنعتیں چلیں گی،لوگوں کو روزگار ملے گا، حکومت تو اب نوجوانوں کو نوکریاں نہیں دے سکتی،ویسے بھی اب نوکریاں سیاسی بنیادوں پر دی جاتی ہیں میرٹ پر حکمران نوکریاں فراہم نہیں کرتے، وفاقی حکومت کی جانب سے وسط مدتی معاشی اصلاحاتی پیکج کا اعلان ہواتھا جوصنعتی فروغ کیلئے خوش آئند ہوسکتا ہے مگر اس پر عملدرآمد کی ضرورت ہے، توقع ہے کہ حکومت چھوٹے اور درمیانے درجے کے کاروبار اور صنعتوں کو فروغ دینے کے لیے اقدامات کرے گی جس کے ملکی معیشت پر اس کے مثبت اثرات پڑیں گے۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.