تیل و گیس تلاش کی نئی پالیسی حتمی کردی جائیگی

اسلام آباد (ہم صفیر نیوز) وزیر توانائی عمر ایوب نے کہا ہے کہ تیل و گیس تلاش کی نئی پالیسی ایک ماہ میں حتمی کر دی جائیگی، پاکستان کی جی ڈی پی کا حجم 600 ارب ڈالر کے قریب ہے،پاکستان کی بڑھتی ہوئی شہری آبادی کی ضروریات کیلئے توانائی کی ضرورت ہے۔پیر کو یہاں وزیر توانائی عمر ایوب خان نے آئل اینڈ گیس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تیل و گیس تلاش کی نئی پالیسی ایک ماہ میں حتمی کر دی جائیگی۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم کو نئی متبادل توانائی پالیسی کے مسودہ پر بریفنگ دے دی گئی۔انہوں نے کہاکہ پاکستان کی جی ڈی پی کا حجم 600 ارب ڈالر کے قریب ہے،پاکستان کی بڑھتی ہوئی شہری آبادی کی ضروریات کیلئے توانائی کی ضرورت ہے۔ انہوں نے کہاکہ انرجی مکس کو مقامی ذرائع توانائی سے تبدیل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ قابل تجدید ذرائع توانائی کی قیمت میں نمایاں کمی ہو گی۔ انہوں نے کہاکہ ہمارا سب سے بڑا چیلنج شروع میں یہ تھا کہ لوگوں کو سمجھائیں کہ ہر قسم کی توانائی کو سسٹم میں آنے دیں۔ انہوں نے کہاکہ 2030 تک ملک میں قابل تجدید ذرائع توانائی کو 30 فیصد کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ مستقبل میں سمارٹ گرڈ ٹیکنالوجی سے نظام بہت بدل جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ نیٹ میٹرنگ کا نظام بہت زیادہ ہو جائے گا۔ انہوں نے کہاکہ عالمی سطح پر توانائی کے شعبے میں بڑی تبدیلیاں ہونے والی ہیں۔وزیر توانائی عمر ایوب خان نے کہاکہ کاروبار میں آسانی کیلئے اقدامات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ وزیراعظم عمران خان کی ہدایات ہیں کہ عوام کی بہتری کیلئے اقدامات کریں۔ انہوں نے کہاکہ نئی کاروبار کے آغاز کیلئے سرخ فیتے کو کم سے کم کر رہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ پاور سیکٹر میں بجلی کی پیداوار میں 40 ارب ڈالر، بجلی کی تقسیم میں 20 ارب ڈالر اور تقسیم میں 20 ارب ڈالر کے مواقع ہیں۔

Facebook Comments

POST A COMMENT.