حزب اللہ کے میزائلوں کو جدید بنانے کے لیے ایران کے خفیہ منصوبے کا انکشاف

واشنگٹن(ہم صفیر نیوز )امریکی جریدے نے ایران کے ایک نئے منصوبے کے بارے میں تفصیلات کا انکشاف کیا ہے۔ یہ منصوبہ لبنان میں حزب اللہ کے میزائلوں کو ترقی دینے پر کام کر رہا ہے۔ مذکورہ میزائلوں کو جدید بنانے کے حوالے سے حزب اللہ کے سیکڑوں جنگجوؤں کو ایران میں تربیت بھی فراہم کی گئی ہے۔امریکی جریدے کے مطابق امریکی انٹیلی جنس کی ایک نئی رپورٹ میں ایران کے ایک خفیہ منصوبے کی تفصیلات بیان کی گئی ہیں جس کا مقصد لبنان میں حزب اللہ ملیشیا کے میزائلوں کو ترقی دے کر جدید بنانا ہے۔ اس رپورٹ کے مطابق ایران اس وقت زلزال 2 اور زلزال 3 ماڈل کے 14 ہزار سے زیادہ میزائلوں کو انتہائی دقیق نشانے کے حامل میزائلوں میں تبدیل کرنے پر کام کر رہا ہے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ ان میزائلوں کے اہم اجزاء کو حزب اللہ ملیشیا کی خفیہ فیکٹریوں میں منتقل کیا جاتا ہے۔ یہ منتقلی اْس راہ داری کے ذریعے عمل میں آتی ہے جو ایران کو عراق اور شام کے راستے لبنان سے جوڑتی ہے۔ حزب اللہ نے ان میزائلوں کو زیر زمین گوداموں میں چھپا رکھا ہے۔امریکی جریدے کی رپورٹ میں اسرائیلی انٹیلی جنس ذرائع کے حوالے سے بتایا گیا ہے کہ حزب اللہ کے میزائلوں سے متعلق ایران کے نئے منصوبے کی لاگت 17 ارب ڈالر تک پہنچ چکی ہے۔جریدے نے توقع ظاہر کی ہے کہ حزب اللہ ملیشیا کے پاس 90 سے 250 میزائل موجود ہیں جو کو پہلے ہی انتہائی دقیق نشانے کا حامل بنایا جا چکا ہے۔ تاہم اس تعداد میں لبنان میں موجود زلزال میزائلوں کو ترقی دیے جانے کے ساتھ اضافہ ہو گا۔

Article Tags

Facebook Comments

POST A COMMENT.