• May 27, 2020

:تازہ ترین خبر

کورونا وائرس: ماسک کی کون سی قسم وائرس کو کتنا روک سکتی ہے؟

طیارہ حادثے کا ذمہ دار کون؟پیپلز پارٹی کے رہنما اورسابق وزیر داخلہ نے کھول کھول کر بیان کر دیا

امریکی ریاستوں میں کرونا وائرس سے ہلاک افراد کی تعداد ایک لاکھ تک پہنچ گئی

وزیر اعلیٰ پنجاب نے ایسے علاقے میں ترقیاتی کام کرانے کا اعلان کردیا کہ جان کر آپ کا بھی منہ کھلا کا کھلا رہ جائے

پنجاب لاک ڈاؤن، مارکیٹوں کے اوقات کار تبدیل، پیٹرول پمپس 24 گھنٹے کھلے رہیں‌گے

عمران خان کتنے سال پاکستان کے وزیر اعظم رہیں گے ؟معروف ماہر علم نجوم نے بڑی پیش گوئی کردی ،2یا 5سال کے لئے نہیں بلکہ ۔۔۔

کورونا لاک ڈاؤن ، بھارت میں پھنسے 179 پاکستانی کل وطن واپس پہنچیں گے

آگ نےلاشوں کوبُری طرح مسخ کيا،ساڑھےتين گھنٹےتک شہداء کی لاشيں جائے وقوعہ پرپڑی رہيں جس کی وجہ سے شناخت کےعمل ميں وقت لگ رہاہے۔

سندھ حکومت نے دوبارہ لاک ڈاؤن لگانے کا عندیہ دے دیا

مالک مکان کے بیٹے کی 25 سالہ کرایہ دار لڑکی کے ساتھ ایسی درندگی کہ روح کانپ جائے،پولیس نے روایتی کھیل کھیلنا شروع کر دیا

کورونا وائرس :سول ایوی ایشن اتھارٹی اور وزارت صحت میں رابطے کا فقدان

کراچی(ہم صفیر نیوز ) جناح ٹرمینل پر کرونا وائرس سے بچاؤ کے معاملے پر سول ایوی ایشن اتھارٹی اور وزارت صحت کے درمیان باہمی رابطوں کے فقدان کا انکشاف ہوا جب کہ دونوں اداروں کے درمیان سرد جنگ کی وجہ سے مسافروں کی مشکلات بڑھ گئیں۔ذرائع ایئرپورٹ کے مطابق ملک بھر کے ہوائی اڈوں کی انتظامی امور پر مامور سول ایوی ایشن اتھارٹی اور وزارت صحت کے درمیان باہمی رابطوں کا شدید فقدان ہے، جس کے سبب کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے کیے گئے ہنگامی اقدامات متاثر ہوسکتے ہیں۔مذکورہ معاملے کی وجہ سے مسافروں کو مشکلات کا سامنا کرنا پڑرہا ہے اور انھیں اکثر و بیشتر گھنٹوں انتظار کرایا جاتا ہے، ذرائع کے مطابق اسکریننگ پر مامور تربیت یافتہ ڈاکٹرز کے اچانک چھٹی پر جانے جبکہ غیر تربیت یافتہ عملے کی جانب سے مسافروں کی اسکریننگ کا بھی انکشاف ہوا ہے۔واضح رہے کہ ہوائی اڈوں پر کرونا وائرس کے حوالے سے ٹھوس اقدام نہ ہونے کے سبب اداروں کی کوتاہی سے پہلا متاثرہ شخص ایئرپورٹ سے نکلنے میں کامیاب ہوا۔

Read Previous

وزارتوں کی جانب سے نامکمل سمریاں منظوری کے لیے بھجوانے کا انکشاف

Read Next

چین میں کورونا وائرس سے مزید 38 افراد ہلاک ہو گئے

%d bloggers like this: