• February 24, 2020

وزیراعظم نے فوری بلوچستان میں فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری کے قیام کی ہدایت کی ہے،فردوس عاشق

اسلام آباد(ہم صفیر نیوز)معاون خصوصی اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ وزیراعظم نے فوری طور پر بلوچستان میں فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری کے قیام کی ہدایت دی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز گزشتہ روز قومی اسمبلی کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہا کہ جمرات کے روز وزیراعظم کی صدارت میں اہم اجلاس ہواہے جس میں مہنگائی،ملاوٹ کرنیوالوں اور ذخیرہ اندوزی کیخلاف اقدامات کا جائزہ لیا گیا ہے ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم نے کراچی میں آٹے کی قیمت پر تحفظات کا اظہار کیا ہے پاسکو سندھ کو 4لاکھ ٹن گندم جاری کر چکی ہے اجلاس میں صوبوں نے وزیراعظم کو ضروری اشیاء کی دستیابی سے متعلق بریفنگ وزیراعظم نے بلوچستان حکومت کو ملاوٹ کرنیوالوں کے خلاف فوری اقدامات کی ہدایت کی بلوچستان میں کھانے پینے کی اشیاء میں ملاوٹ کا پتا چلانے والی لیبارٹری موجود ہی نہیں ہے جس پر وزیراعظم نے فوری طور پر بلوچستان میں فوڈ ٹیسٹنگ لیبارٹری کے قیام کی ہدایت دی۔وزیراعظم نے فوڈ پرائس مانیٹرنگ اور نیشنل ڈیمانڈ سیل کے قیام کی ہدایت دی ہے ان کا مزید کہنا تھا کہ زراعت 18ویں ترمیم کے بعد صوبائی معاملہ ہے۔وزیراعظم نے ملاوٹ کی روک تھام سے متعلق جامع حکمت عملی تیار کرنے اور صوبائی حکومتوں کو ملاوٹ کی روک تھام کیلئے ایک ہفتے میں حکمت عملی تیار کرنے کی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ سوشل میڈیا پر قابل اعتراض مواد ہٹانے کیلئے کمپنیوں کا دروازہ کھٹکھٹانا پڑتا تھا۔کشمیر پر پاکستانی صارفین جب اظہار خیال کرتے تو سوشل میڈیا کمپنیاں ان کا اکاؤنٹ بلاک کر دیتی ہیں۔معاشرے میں عریانی پھیلانے کیلئے بھی سوشل میڈیا کو استعمال کیا جا رہا ہے بدقسمتی سے پاکستان میں سوشل میڈیا کو ریگولیٹ کرنے کا کوئی طریقہ کار موجود نہیں تھا ان تمام ضروریات اور صارفین کے حقوق کا تحفظ ضروری تھا انہی ضروریات کے تحت سوشل میڈیا سے متعلق ضروری قواعد و ضوابط بنائے گئے معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ نئے قواعد کے تحت سوشل میڈیا کمپنیز متنازع مواد 6گھنٹے میں ہٹانے کی پابند ہونگی نئے قواعد کے تحت سوشل میڈیا کمپنیز کا پاکستان میں دفتر ہونا ضروری ہو گا۔سوشل میڈیا کمپنیوں کو اپنا ڈیٹا بینک پاکستان کیساتھ شیئر کرنا لازمی ہو گامختلف عناصر جعلی اکاؤنٹس بنا کر سوشل میڈیا پر پاکستانی سلامتی کیخلاف محاذ آرائی کرتے ہیں قوانین کا مقصد سوشل میڈیا پر رائے کے اظہار کی آزادی پر قدغن لگانا ہر گز نہیں قوانین کی خلاف ورزی کی صورت میں سوشل میڈیا کمپنی کو پاکستان میں بند کیا جاسکے گا ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ سوشل میڈیا کمپنیاں اپنے خلاف فیصلے پر ہائیکورٹ سے رجوع کر سکیں گی ۔

Read Previous

لاہور، 24 گھنٹو ں میں آوارہ کتوں کے کاٹنے کے مزید59 واقعات رپورٹ

Read Next

دوکانوں کے کرایہ داری کی مدت معاہدہ کم از کم دس سال مقرر کی جائے،خالد چوہدری

%d bloggers like this: